پودوں سے بجلی پیدا کرنا ممکن ہے

Share on facebook
Share on twitter
Share on linkedin
Share on pinterest
Share on print
Share on email
Share on whatsapp

تحریر: سرگوشی نیوز ڈیسک

اٹلی کے انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی نے حال ہی میں اپنی ایک تحقیقاتی رپورٹ جاری کی ہے جس میں دعویٰ کیا ہے کہ پودوں سے بجلی پیدا کی جا سکتی ہے۔ پودے ایک گرین پاور سورس ہیں جو مستقبل میں بجلی پیدا کرنے کا ایک بڑا ذریعہ بن سکتے ہیں۔ جس سے دنیا پر تباہ کن ماحولیاتی اثرات ڈالے بغیر بجلی حاصل کی جا سکتی ہے۔ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ پودے یا درخت کے ایک پتے 150 وولٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے جس کی مدد سے 100 ایل ای ڈی لائٹ بلب جلائے جا سکتے ہیں۔ Advanced Functional Materials میں شائع ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ ایک ہائبرڈ درخت میں قدرتی اور مصنوعی پتے مل کر ایک گرین الیکٹریکل جنریٹر کے طور پر کام کر سکتے ہیں جو ہوا سے بجلی پیدا کر سکتے ہیں۔ سینٹر فار مائیکرو بایو روبوٹکس (CMBR) اور IIT کی ریسرچ ٹیم کی اس تحقیق کا بنیادی مقصد قدرتی ماحول سے مطابقت رکھنے والے نئے مٹیریلز اور جدید روبوٹک ٹیکنالوجیز کی ترقی تھا۔ 2012ء میں یورپی یونین نے پروجیکٹ پلانٹوئڈ پر سرمایہ کاری کی تھی جس کے نتیجے میں پہلا شجری روبوٹ بنایا گیا ہے۔ اس تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ کسی خاص قسم کے میٹریل اور ہوا کے چھونے سے پتے بجلی پیدا کر سکتے ہیں۔ کچھ خاص قسم کے پتوں پر اگر میکنانی قوت استعمال کی جائے تو وہ بجلی پیدا کرتے ہیں۔ ’’کونٹیکٹ الیکٹریفیکیشن‘‘ کے عمل کے دوران ایک پتہ اپنی سطح پر الیکٹر چارج جمع کرسکتا ہے جو فوراً ہی پودے کے اندرونی ٹشوز میں منتقل کر دی جاتی ہے۔ یہ ٹشوز ایک الیکٹرک کیبل کی طرح کام کرتے ہیں جو بجلی کو پودے کے دوسرے حصوں میں منتقل کرتے ہیں۔ اور پودے کے تنے میں پلگ لگا کر پودے میں پیدا ہونے والی بجلی کو الیکٹرانک آلات چلانے کے لیے استعمال میں لایا جا سکتا ہے۔ اور ایک پتے سے 150 وولٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے جو 100 ایل ای ڈی بلب جلانے کے لیے کافی ہے۔ اسی تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ پودے ہوا سے بھی بجلی پیدا کرتے ہیں۔ لہٰذا محقیقین نے Nerum oleander tree یا کنیر کے درخت میں مصنوعی پتے لگائے جو درخت کے اصلی پتوں کو چھوتے تھے۔ جب ہوا چلنے سے پتے ہلتے تو ہائبرڈ درخت سے بجلی پیدا ہوتی ہے۔ جبکہ زیادہ مصنوعی پتوں کے اصلی پتوں کے چھونے سے زیادہ بجلی پیدا ہوتی ہے۔ اس لحاظ سے پورے پودے یا جنگل کے زیادہ درختوں کو ہائبرڈ بنانے سے زیادہ بجلی حاصل کی جا سکتی ہے۔ یہ تحقیق یورپی سرمایہ کاری سے چلنے والے Growbot پروجیکٹ کے لیے اہم سمجھی جا رہی ہے جس کا بنیادی مقصد بایو روبوٹ بنانا ہے۔ ایسے روبوٹ کو پودوں سے بھی بجلی فراہم کی جائے گی۔ اس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ مستقبل میں پودے ہی ہمارا بجلی کا سورس بنیں گے پوری دنیا میں ہر جگہ پائے جاتے ہیں۔
Close Menu