وزن اور صحت بخش غذا

Share on facebook
Share on twitter
Share on linkedin
Share on pinterest
Share on print
Share on email
Share on whatsapp

تحریر: نیّر رُباب

صحت کے لیے چست و تندرست رہنا ہی صحیح ہے ۔ جسم خوبصورت اور چست ہو تو ایک جانب آپ ایک متاثر کن شخصیت کے مالک نظر آتے ہیں تو دوسری جانب بیماریاں آپ سے دور بھاگتی ہیں۔ خود کو سلم اور فٹ رکھنے کے لیے بہت سے لوگ ورزش کرتے ہیں تو بہت سے خود پر کھانا پینا حرام کر بیٹھتے ہیں جبکہ محض صحت سے متعلق غلط عادتوں کو چھوڑکر اچھی عادتوں کو اپنانے سے خوبصورت جسامت کا مالک بنا جا سکتا ہے۔مثال کے طور پر اپنی غذا کے انتخاب پر توجہ دیتے ہوئے ایسی چیزیں کھائیں جو نہ صرف جسم کو توانائی پہنچائیں بلکہ انہیں کھا کر وزن بھی نہ بڑھے۔ اچھی صحت کے لیے ناشتا بادشاہوں جیسا کرو‘ دوپہر کا کھانا وزیروں جیسا اور رات کا کھانا فقیروں جیسا کھاؤ کی مثال پر عمل کریں۔ 3 بار پیٹ بھر کر کھانا کھانے کے بجائے دن بھر میں 6 بار کھائیں لیکن ایک بار میں کم خوراک لیں۔ رات کے کھانے میں کاربوہائیڈریٹس جیسے روٹی وغیرہ نہ کھائیں۔ کوشش کریں رات کا کھانا ہلکا پھلکا کریں جیسے سلاد، دالیں اوربھنی ہوئی مچھلی وغیرہ۔ اس بات کا خاص خیال رکھیں کہ ایک بار میں کیا اور کتنا کھا رہے ہیں۔
ڈائٹنگ کا مطلب خود پر بڑھتے ہوئے وزن کی فکر مسلط کرنا نہیں ہے بلکہ صحت کے اصولوں پر عمل کرنا ہے۔ آپ مختلف طرح کے کھانے کھائیں، روزانہ ایک جیسا کھانا نہ کھائیں بلکہ غذا کو تبدیل کرتے رہیں۔ بصورت دیگرآپ کو ڈائٹ پلان سے اُکتاہٹ محسوس ہونے لگے گی۔ مثال کے طور پر اگر ناشتے میں انڈا کھاتے ہیں تو ہر روز اسے مختلف انداز میں بنائیں۔ جیسے کہ کبھی پیزا اسٹائل کا آملیٹ بنالیں، کبھی ہاف فرائی کھالیں تو کبھی اُبال کر سبزیوں یا سلاد کے ساتھ نوش کریں۔ ہفتے میں دو دن انڈا کھانے کے علاوہ گندم کی روٹی بھی کھا سکتے ہیں اور ساتھ کسی پھل کا جوس یا شیک وغیرہ بھی پیا جا سکتا ہے۔
دوپہر کے کھانے میں دالیں، سبزیاں، کباب، پالک، گندم سے بنا پاستا، چھولے کی چاٹ، حلیم، لال لوبیا یا مرغی کھائی جا سکتی ہے۔ اگر ناشتے میں روٹی کھا چکے ہیں تو دوپہر میں روٹی یا پاستا نہ کھائیں۔ اس بات کا خیال رکھیں کہ آپ کا کھانا کم اور سبزیوں کے تیل میں پکایا گیا ہو۔
رات کے کھانے میں چکن تکّہ، گوبھی کا رول، سوپ، سبزیاں یا دالیں کھائی جا سکتی ہیں۔ رات کو سونے سے پہلے ہلکی پھلکی ورزش ضرور کریں۔
دن میں کئی بار اسنیکس لینے میں کوئی مضائقہ نہیں ہے تاہم بطور اسنیکس پھل، تازہ پھلوں کے جوس یا خشک میووں کا انتخاب بہترین ہوگا۔ ایک دن میں تین اسنیکس سے زیادہ نہ لیں ناشتے ‘ دوپہر کے کھانے ا ور رات کے کھانے کے بعد ایک ‘ایک اسنیک لیا جاسکتا ہے۔ رات کے کھانے کے بعد اسنیکس کا استعما ل آپ کی خواہش پر منحصر ہے۔ رات کوکچھ کھانے کی طلب ہو تو تھوڑے سے خشک میوے کھا لیں۔یوں تو پھل جسم کو طاقت و توانائی پہنچاتے ہیں لیکن کسی بھی چیز کا ضرورت سے زیادہ استعمال نقصان دہ ہو سکتا ہے۔ پھل بھی ایک دفعہ میں فروٹ چاٹ کی شکل میں کھانے کے بجائے ایک بار میں ایک ہی پھل کھائیں۔
یہ ایک حقیقت ہے کہ ایک بار اپنا اپنی خواہش و ضرورت کے مطابق وزن میں کمی کے بعد ہمیں لگتا ہے کہ اب ہم بغیر سوچے سمجھے جو چاہیں کھا سکتے ہیں جبکہ یہ ایک غلط خیال ہے۔ وزن برقرار رکھنے کے لیے ضروری ہے کہ آپ کی صحت مند غذا ہی رہے ۔ یہ امر آپ کے کم ہونے والے وزن کو قابو میں رکھنے کے لیے انتہائی ضروری ہے۔

Close Menu