منٹو اور جج

اگر یہ سوچ کر پریشان ہو کہ ہم اسلامی جمہوریہ پاکستان کے جج تمہاری سالگرہ پر کیوں خوش ہیں، مبارک کیوں دے رہے ہیں تو میاں بات یہ ہے کہ ہمارے برادر ججوں کے ساتھ تمہارے کچھ دن گزرے ہیں۔ یہ علیحدہ بات ہے کہ وہ منصف کی کرسی پر…

Continue Reading

منزل ہے کہا تیری اے لالہؑ صحرائی (دوسرا حصہ)

یوتھ یا ملک کا "نوجوان " ۔۔ جو 16 سے 34 سال کی عمرکے طبقے کو سمجھا جاتا ہے۔۔۔ وہ ہے جو پہلے ہی ملک کے تاریخی"حقایقؑ" سے بے خبر ہے اور اسی سوشل اسٹدی کو تاریخ سمجھتا ہے جس میں سچ اب اتنا ہی رہ گیا ہے جتنا آٹے…

Continue Reading

افسانہ دنگل کے چیمپین!!!؟؟؟

کچھ عرصہ قبل میں نے فیس بک کے افسانوی مقابلوں کو دنگل قرار دیا تو ایک طوفان اٹھ کھڑا ہوا۔اگرچہ بیشتر سنجیدہ حضرات نے میری رائے سے اتفاق کیا لیکن ہمارے نوعمر اور ناتجربہ کار افسانہ نگاروں نے موضوع کو سمجھے بغیر یہ فرض کر لیا کہ ہم پرانے لکھنے والوں…

Continue Reading

منزل ہے کہاں تیری اے لالہؑ صحرایؑ (حصہ اوّل)

کچھ دن پہلے شاہد آفریدی کی ایک تصویر فیس بک پر دیکھی جس مٰیں وہ کٹے ہوےؑ بکرے کا سر ایک تین سال کے بچے کے سامنے کرکے ہنس رہا ہے لیکن دہشت زدہ بچہ رو رہا ہے۔ اس پر کناڈا، یورپ، امریکہ سے کمنٹ ملے کہ خان یہاں ہوتا…

Continue Reading

سائنس کی درسی کتابوں میں سائنس پڑھائی جا رہی ہے کہ دینیات؟

جب پاکستانی طالب علم فزکس یا بیالوجی کی کتاب کھولتے ہیں تو اس کشمکش کا شکار ہو جاتے ہیں کہ وہ سائنس کی تعلیم حاصل کر رہے ہیں یا دینیات کی؟  وجہ یہ ہے کہ حکومتی سرپرستی میں چلنے والے ٹیکسٹ بک بورڈ کو قانونی طور پر پہلے باب میں…

Continue Reading

ہے کہاں تمنا کا دوسرا قدم یا رب

ہے کہاں تمنا کا دوسرا قدم یا رب ہم نے دشت امکاں کو ایک نقش پا پایاہمیں نہیں معلوم کہ مرزا غالب نے یہ شعر لکھتے ہوئے تخیل کا کتنا طویل سفر کیا ہوگا لیکن یہ یقین سے کہہ سکتے ہیں کہ تمنا کا دوسرا قدم اور دشت امکاں ہر…

Continue Reading

اس سال اس پر بھی دھیان دے لیں

یہ بھی تو ممکن ہے کہ ہمیں اپنا بنیادی مسئلہ بخوبی معلوم ہو مگر حل نہ معلوم ہو۔یا حل بھی معلوم ہو لیکن اتنا تکلیف دہ اور مہنگا لگتا ہو کہ ہم جم کے علاج کرنے کے بجائے وقتی ریلیف کے لیے طرح طرح کے پین کلرز اس امید پر…

Continue Reading

’’جب ترے شہر سے گزرتا ہوں‘‘

یہ میری آنکھوں اور کانوں کا امتحان تھا۔بہت معمولی شکل و صورت کا یہ معمولی اداکار اور انتہائی ’’ماٹھا‘‘ گلوکار اک ایسے لازوال گیت پر طبع آزمائی کر رہا تھا جو برصغیر پاک و ہند کی فلم انڈسٹریز کے ہینڈسم ترین سنتوش کمار پر پکچرائز کیا گیا اور اک کلاسیک…

Continue Reading

برہمن، سید اور جنرل اور جنرل اگر سید بھی ہو تو؟

پانچ جنوری 2014 کو اگر بھٹو ہوتے تو 86 برس کے ہوتے۔ لیکن یہ شاید میری خواہش ہے۔ کیونکہ آج تک پاکستان میں جتنے بھی گورنر جنرل یا صدر بنے ان میں سوائے فضل الہی چوہدری ( 82 سال) اور غلام اسحاق خان ( 91 سال ) کسی نے بھی…

Continue Reading

مغلوں کے عروج اور ہمارے زوال کے اسباب

لاہور میں گھومتے اور قدیم پرشکوہ عمارتیں دیکھ کر خیال آتا ہے کہ کسی زمانے میں عام لوگ ان عمارتوں کے قریب پھٹکنے کی بھی جرات نہیں کرتے ہوں گے۔ آج یہ قدیم شکستہ عمارتیں عام لوگوں کے لیے ایک سیر گاہ بن چکی ہیں، جنہیں عالمی تاریخی ورثہ قرار…

Continue Reading
Close Menu