حامد میر

حامد میر کا تعلق لاہور سے ہے. یہ 1987 سے صحافت کر رہے ہیں. یہ جنگ اور اوصاف کے علاوہ دیگر اخبارات سے بھی وابستہ رہے ہیں. تاہم انہیں شہرت اسامہ بن لادن کے انٹرویو سے ملی. بعد میں یہ جیو ٹی وی سے کیپیٹل ٹاک کے نام سے ایک سیاسی مباحثے کا پروگرام کرتے رہے ہیں. اس کے علاوہ یہ اردو اور انگریزی اخبارات کے لیے کالم بھی لکھتے ہیں.

حامد میر

قبروں کے پتھر چرانا چھوڑیئے

امرتسر سے ایک سکھ صحافی دوست نے ایسی فرمائش کر ڈالی جس کو پورا کرنا بہت مشکل تھا۔ کہنے لگے: آپ نے اپنے ایک کالم میں بابا گورو نانک کے بارے میں ڈاکٹر علامہ اقبالؒ کے اشعار شامل کر کے ہمارے دل جیت لئے ہیں۔

مکمل پڑھئے »
حامد میر

گناہِ بے لذت

ہمارے اردگرد ذہنی مریضوں کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے۔ اختلاف رائے پر آستینیں چڑھا کر للکارنا، گالی دینا، غداری کے الزامات لگانا اور کفر کے فتوے لگانا معمول بنتا جا رہا ہے۔ ہماری سیاست و صحافت میں بھی اختلاف رائے کی جگہ ذاتی دشمنی

مکمل پڑھئے »
حامد میر

سیاپا

ہر کسی نے اپنی اپنی مَیں کا سیاپا ڈال رکھا ہے۔ میں ہی سب کچھ ہوں۔ میں نہیں تو کچھ نہیں۔ حق گوئی مجھ پر ختم ہو چکی۔ باقی سب جھوٹ بکتے ہیں۔ ملک و قوم کا درد بھی صرف میں سمجھتا ہوں۔ باقی سب

مکمل پڑھئے »
حامد میر

شکریہ مانچسٹر

یہ ایک مشکل سوال تھا جو میں نے اپنے آپ سے پوچھا لیکن اس مشکل سوال کا جواب مجھے بڑی آسانی کے ساتھ فوراً مل گیا۔ سوال یہ تھا کہ کیا مسلمانوں کے کسی ملک میں کوئی بزنس مین مسجد خرید کر اور پھر اسے

مکمل پڑھئے »
حامد میر

فکری آلودگی

کوئی مانے یا نہ مانے لیکن حقیقت یہ ہے کہ عمران خان پاکستان کے سب سے بڑے صوبے میں ایک بہت بڑی تبدیلی لیکر آئے ہیں ۔ابھی یہ طے نہیں ہوا کہ اس تبدیلی سے پنجاب کو فائدہ ہوا یا نقصان لیکن تبدیلی تو آخر

مکمل پڑھئے »
Close Menu